آج میری بسمہ مر گئی

بلاگ اے

میرے مضبوط بازو آج کانپ رہے ہیں، ان میری دس ماہ کی بیٹی ہے جو بخار میں تپ رہی ہے اور ہسپتال جانے والی سڑک گاڑیوں، دھویں اور شور سے بھری پڑی ہے، مجھے کچھ سنائی نہیں دے رہا، قسم سے مجھے کچھ دکھائی نہیں دے رہا صرف اپنی بیٹی کے سوا۔ میں خود کو مضبوط رکھنا چاہ رہا ہوں میرا دل کانپ کانپ کے دعائیں مانگ رہا ہے کہ کسی طرح رستہ کھل جائے اور میں ہسپتال پہنچ جاؤں۔

خدا خدا کر کے گاڑیاں آگے بڑھی ہیں، تھوڑی سی تسلی ہوئی ہے، ہسپتال قریب آرہا ہے اور میرے بازو مزید گرم محسوس کر رہے ہیں، میری ننھی سی جان بہت تکلیف میں ہے۔

میں ہسپتال کی طرف بھاگ رہا ہوں، بہت رش ہے اور بہت سے لوگ کیمروں کے ساتھ کھڑے ہیں لیکن مجھے ان کی کیا پرواہ، میرے دماغ میں بس یہی چل رہا ہے کہ کسی طرح…

View original post 250 more words

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s